اگر مجھ سے بچنا ہے__تو اپنا حسن سنبھالو بنت حوا۔۔۔

Header Ads Widget

اگر مجھ سے بچنا ہے__تو اپنا حسن سنبھالو بنت حوا۔۔۔

 سبق آموز تحریریں


24 رجب المرجب

1442ھجری

9, مارچ , 2021ء

25 ,پھاگن  ,2077ب

بروز منگل   TUESDAY      

آج کی آچھی بات

اَلسَّـلاَمُ عَلَيكُـم وَرَحمَةُاللهِ وَبَرَكـَاتُهُ

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ 

 

اگر مجھ سے بچنا ہے__تو اپنا حسن سنبھالو بنت حوا۔۔۔ 


میں مرد ہوں!۔۔۔۔

وہی مرد جسے تم حیوان کہتی ہو۔۔۔

جسے تم کبھی درندہ کہہ کر پکارتی ہو تو کبھی جانوروں سے بھی بدتر القابات دیتی ہو۔۔۔

جسے تم جسم کا پجاری کہتی ہو۔۔۔

جسے تم ہوس کا مارا کہتی ہو۔۔۔

میں مرد تیری ان سب باتوں کا اعتراف کرتا ہوں ، میں حیوان ہوں ، درندہ ہوں ، جسم کا پجاری ہوں۔۔۔

مرد آگ ہے۔۔۔

!اور عورت یہ بات جانتی ہے ۔۔۔

چنگاری لگنے کی دیر ہے آگ بھڑک اٹھتی ہے۔۔۔

اور آگ کبھی چنگاری کے بغیر نہیں لگتی۔۔۔


قصور کس کا ، آگ کا یا چنگاری کا۔۔؟

فیصلہ آپ کریں۔


میں نے روزہ رکھا کام کیلئے بازار آیا کہ اچانک خوشبو آنے لگی۔۔۔

سوچا چھوڑ میاں روزے سے ہو نظریں نیچے ٹکاۓ رکھو۔۔۔

لیکن جونہی خوشببو کا احساس زیادہ ہوا میں ماٸل ہونے لگا کہ حواس باختہ ہوکر نظریں اٹھانے پر مجبور ہوگیا۔۔۔

نظریں اٹھنے کی دیر تھی ، حسین جمیل پری میری آنکھوں کے سامنے ڈوپٹا لیے، ایک ساٸڈ سے ڈوپٹا اپنے کاندھے پر رکھا ہوا۔۔۔

کیا حسن تھا جیسے سارا حسن اسی پر ختم ہوگیا ہو۔۔۔

36خوب بناٶ سنگھار کیا ہوا۔۔۔

آنکھوں میں کاجل ، ہونٹوں پر سرخی۔۔۔

میں گھورنے لگا ۔۔۔

کہ اچانک محترمہ میرے پاس رکیں اور مخاطب ہوئیں ہیلو اوۓ کیا گھور رہے ہو۔۔۔۔

میرے پاس جواب نہیں تھا۔۔۔۔

کیا کہتا!۔۔۔۔۔۔۔۔۔


ارے اس میں میرا کیا قصور ، فطرت ہے مرد کی۔۔۔

 

حسن کو دیکھے گا تو دل للچاۓ گا۔۔۔

لیکن ذرا پیچھے دیکھیے، میرا ایسا ارادہ نہیں تھا، لیکن مجھے خوشبوؤں نے چنگاری لگاٸی۔۔۔

پھر حسن اور نماٸش نے مجبور کردیا کہ اسے دیکھوں۔۔۔

دکان پر گیا، ٹی وی آن کیا ویسی ہی بےشمار حسیناٶں کو احتجاج کرتے دیکھا۔۔۔

میں پھر پریشان۔۔۔

اچانک میری نظر ان کے ہاتھوں میں پکڑے مختلف بینرز پر پڑی۔۔۔

عورت کو کھلونا نہ بناٶ

عورت کو آزاد کرو

ریپ بند کرو

مجھے گھورنا چھوڑو

مجھے آزاد کرو

میں عورت ہوں کھلونا نہیں ۔۔۔

میں عجیب کشمکش میں گم تھا۔۔۔

 

پھر میں نے نتیجہ نکالنےکی ٹھانی کہ غلطی کس کی؟

 

میں نے محلے اور بازار کے گھٹیا اور آوارہ ترین مردوں سے ایک سوال پوچھا۔۔۔

کیا تم نے کبھی اسلامی برقعے میں ملبوس کسی عورت کو گھورا یا گندی نظر سے دیکھا۔۔۔

سب کا ایک ہی جواب تھا۔۔۔

بھاٸی بھلا ٹوپی والا برقعہ پہنے لڑکی جارہی ہو تو کون دیکھتا ہے۔۔۔

ہم تو بس آٸٹم دیکھتے ہیں۔۔۔

کیا کیا کیا۔۔۔۔۔۔؟؟

ایک لڑکی نے لاٸن دی ، بات چیت پر پہنچی۔۔۔

بنا کہے اپنی تصویر بھیج دی۔۔۔

مرد نے تعریف کی۔۔۔

پھر کچھ ہی دنوں میں تصویر مانگی تو بنا ڈوپٹے کے یا گلے میں ڈوپٹہ لیے تصاویر کی لاٸن لگ گٸی۔۔۔

اب مرد کیا کرے۔۔۔

مرد کی تو فطرت ہے قدرت نے رکھی ہے۔۔۔

فطرت سے لڑنے کو تو رہا۔۔۔

ملاقات کا پوچھا تھوڑے سے اصرار پر لڑکی مان گئی۔۔۔

ملے دو تین ملاقاتوں میں بات آگے پہنچی۔۔۔

بالکل باہمی رضامندی سے جسمانی تعلق قاٸم ہوا۔۔۔

لیکن وقت نے ورق پلٹا اور لڑکی پریگنینٹ ہوگئی ۔۔۔


سوچیے اب کیا ہوگا۔۔

 

لڑکی نے لڑکے کو فون کیا۔۔۔

غصہ ہوٸی گالیاں دی۔۔۔

مرد کو ایک لمحے میں ظالم بنا دیا۔۔۔۔

بولنے لگی تمہاری وجہ سے مجھے یہ دن دیکھنا پڑا۔۔۔

تم نے میری عزت خراب کر دی۔۔۔۔

تم صرف ٹاٸم پاس کررہے تھے۔۔۔

تم تو صرف جسم چاہتے تھے۔۔۔

تم ہوس کے مارے تھے۔۔۔

تم نے میرا استعمال کیا۔۔۔۔

اب کیا ہوا۔۔۔۔

وہی لڑکی ایک کونے میں کھڑی مظلوم بن گئی۔۔۔۔

بات آگے بڑھی سماج کے کٹہرے میں آئی۔۔۔

عدالت نے ثبوت دیکھے اور مرد کو ریپسٹ قرار دے دیدیا۔۔۔

یا پھر مرد کو ظالم اور عورت کو مظلومیت کی پہلی صف میں کھڑا کردیا۔۔۔

مرد تو ظالم تھا حیوان کہلایا۔۔۔

نہ تو سماج کی عدالت نے مرد کی سنی، نہ قانون کی عدالت نے۔۔۔

قانون نے آگ تو دیکھی، چنگاری کو نظرانداز کردیا۔۔۔

عورت کو بَری کردیا اور مرد کو قید کی سزا سنا دی۔۔۔

کالم نگار اٹھا ، مرد کو حیوان لکھا درندہ لکھا جانور لکھا ، شکاری لکھا۔۔۔

جو دل میں آیا لکھ ڈالا۔۔۔

عورت کے انٹرویو شروع ہوۓ اور عورت اسٹار بن گئی اور مرد ایک بار پھر سے تاریخ میں اپنا تعارف حیوانیت کے قصے میں لکھوا گیا۔۔۔

 

بات یہاں بس نہیں ہوئی۔۔۔۔

 

میں نے ارادہ کیا میں اب عورت کو نہیں گھوروں گا۔۔۔

لیکن بازار موبائل لینے گیا عورت حسن کی نمائش کے ساتھ موبائل بیچ رہی تھی۔۔۔۔

میں سم لینے آفس گیا وہاں لڑکی ، الیکٹرونکس مارکیٹ گیا وہاں لڑکی ، سفر کے لیے بس میں سوار ہوا وہاں لڑکی ، حتیٰ کہ میں مٹھائی لینے گیا تو یقین کیجیے وہاں بھی لڑکی۔۔۔۔

ارے میں تو مرد ہوں۔۔۔

فطرت نے مجھے ایسا ہی بنایا ہے ، حسن دکھاٶگی تو میں تم پر مر مٹوں گا۔۔۔۔

اور جب میں حسن کے نشے میں آگیا تو میرا نشہ تو وہی بنے گی ناں جو مجھے دستیاب ہوگی۔۔۔۔

سگریٹ اگر مارکیٹ میں دستیاب ہی نہیں ہوگا تو اسموکر اسموکنگ کیسے کرے گا۔۔۔۔۔

حسن جب سات پردوں میں چھپا ہوگا تو مرد تمہیں کیسے گھورے گا۔۔۔۔

آخر کب تک تم شکار بنتی رہوگی اور چّلاتی رہوگی مرد حیوان ہے جانور ہے۔۔۔۔

سنو تمہارے چّلانے سے مرد کو کوئی فرق نہیں پڑنے والا۔۔۔

تم حسن دکھاٶگی مرد تمہیں گھورے گا ، تمہیں پھنساۓ گا اور تم پھنسو گی۔۔۔۔

بار بار شکار ہوگی اور پھر سڑکوں پر احتجاج کے لیے نکلوگی۔۔۔۔


اگر مجھ سے بچنا ہے تو اپنا حسن سنبھالو ، حسن چھپاٶ اس سے پہلے کہ حسن کے شیدائی اکٹھے ہوجاٸیں۔۔۔۔


برقعہ پہنو مگر اسلامی پہنو۔۔۔

فیشن کی آڑ میں برقعے اور پردے کو بدنام مت کرو۔۔۔۔

تم برقعے سے آنکھیں نکالو گی تو میں تمہاری آنکھوں میں ڈوب کر مر جاٶں گا۔۔۔۔

تیرے حسن کا نصف حصہ تو تیری آنکھوں میں پوشیدہ ہے۔۔۔۔

آنکھیں یا چہرہ ننگا کرنے کے لیے کیوں فتوؤں کا سہارا لیتی ہو۔۔۔۔

تمہارا تنگ برقعہ میرے جذبات کو ابھارتا ہے۔۔۔۔

تمہارا باریک لباس میری مردانگی کو للکارتا ہے۔۔۔۔۔

تم لاکھ احتجاج کر لو ، تم سڑکوں پر آٶ ، تم لاکھ قانون پاس کرواٶ۔۔۔۔

میں مرد ہوں میں باز نہیں آٶں گا ، تم چنگاری لگاٶگی میں آگ بھڑکاٶں گا۔۔۔۔

اور ہاں مجھ سے قسم لے لو تم اگر گھر سے باہر ایسے نکلوگی جیسے صحابیات نکلا کرتی تھیں ، چادر اتنی لمبی کہ زمین پر گھسٹ رہی ہے اور دیوار کے اتنا ساتھ چل رہی ہو کہ تمہاری چادر دیوار سے گھسٹ رہی ہو۔۔۔۔

خدا کی قسم تمہیں کوئی نہیں گھورے گا۔۔۔۔

نوٹ:اس پیغام کو دوسروں تک پہنچائیے تاکہ اللہ کسی کی زندگی کو آپ کے ذریعے بدل دے 

……………………………………………


صدقہ جاریہ کمائیں


اپنے دوستوں کو آج کی آچھی بات ویب سائٹ کو روز دیکھیں اور اپنے دوستوں کو بھی لنک سینڈ کریں

اس گروپ میں اسلامی تحریریں, قرآن پاک کا ترجمہ, احادیث, قصص الانبياء, اسلامی واقعات اور صحابہ کرام کے قصے شئیر کئے جاتے ہیں ,

گروپ جوائن کریں اور صراط مستقیم پر چل کر جنت کے حقدار بن جائیں

ان شاء اللہ 

روزانہ ایک حدیث مبارک اور قرآن پاک کی آیات کا اردو ترجمہ سبق آموز تحریر 

قصص الانبياء, اسلامی واقعات اور صحابہ کرام کے قصے حاصل کرنے کے لیے ھمارا گروپ جوائن کریں تاکے ھم دین سیکھ سکیں

آئیں مرنے سے پہلے مرنے کی تیاری کریں

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے